السلام وعلیکم پاکستانیوں
آج کا سوات
 عرض کیجاتی ہے کہ اللّٰہ تعالیٰ نے اس دھرتی ماں پاکستان کو ہر قسم کی لامحدود نعمتوں وبرکتوں سے نوازا ہے چاہے وہ قدرتی وسائل ہو یا موسم ہو یا خوبصورتی ہو ہر طرف اللہ تعالیٰ کی خصوصی انعامات دیکھنے کو ملتے ہیں اسی نعمتوں کو مدنظر رکھتے ہوئے اللہ تعالیٰ اس سر زمین پاکستان کو وادی سوات جیسے جنت نظیر وادی سے مالا مال کیا ہے وادی سوات جو کہ پاکستان شمالی علاقے میں واقع ہے اس وادی کو اللہ تعالیٰ نے بے پناہ قدرتی حسن سے نوازا ہے


 1969ء سے پہلے وادی سوات ایک آزادانہ شاہی ریاست ہوا کرتا تھا لیکن 1969ء کے بعد وادی سوات پاکستان کے ساتھ الحاق ہوگیا اور اس کو ریاست کے بجائے ضلع کا درجہ دیا گیا 1969ء سے 2004 تک کا سفر اسں وادی کیلئے نہایت ہی کامیابی و کامرانی کا تھا ہر طرف خوشی ہی خوشی کا سماں تھا امن وامان کا گہوارہ تھا ۔ 

لیکن 2005ء کے بعد اس علاقے کو کسی کی بری نظر لگ گئی اور عروج کی پٹڑی سے اتر کر یہ علاقہ زوال کا شکار ہوگیا 2006ء کے آخر میں مذہبی خریداروں نے اس کے علاقے کے لوگوں کو مذہب کے نام پر سبز باغ دکھانا شروع کردیا اور یہاں پر لوٹ مار ظلم وجبر کے بازار گرم ہو گئے ہر طرف خوف و ہراس کا سماں چھایا ہوا تھا لوگوں کی مال وجان 
ور عزت نفس تک سب کچھ محفوظ نہیں تھی ۔ 

حکومت پاکستان نے اس وادی کو تاریکیوں سے نکلوانے کیلئے فوجی آپریشن شروع کرنے کا فیصلہ کر لیا اللہ تعالیٰ کے خصوصی عنایت اور یہاں کے غیور عوام اپنی افواج اور دیگر قانون نافذ کرنے والے اداروں کے ساتھ شانہ بشانہ کھڑے ہو کر اور لازوال قربانیاں دے کر اس دھرتی کو تاریکیوں سے نکال کر ایک بار پھر امن وسلامتی کا گہوارہ بنا دیا میں بذاتِ خود اس علاقے کا باشندہ ہوں میں اپنے آنکھوں سے اس علاقے کی تباہی، بدامنی دیکھی ہے کسی کو یقین تک نہیں تھا کہ وادی سوات دوبار اپنے پیروں پر کھڑا ہو گا لیکن الحمدللہ افواج پاکستان اور غیور عوام کے لازوال قربانیوں اور کاوشوں کے بعد وادی سوات نہ صرف اپنے پیروں پر کھڑا ہوا ہے بلکہ ترقی و خوشحالی کی راہ پر گامزن ہے۔ 


وادی سوات میں الحمدللہ اب مکمل طور پر امن و امان قائم ہوچکا ہے اور الحمدللہ افواج پاکستان اور دیگر ریاستی اداروں کے لازوال قربانیوں کے بدولت یہ علاقہ باقی پاکستان سے بہت زیادہ پرامن ثابت ہو گیاہے ۔

 وادی سوات میں افواج پاکستان کا اصل مقصد قیام امن تھا جو حقیقی معنوں میں شرمندہ تعبیر ہوا ہے اب پاک فوج اور دیگر ریاستی اداروں کے تعاون سے ہر وقت اس علاقے کے تعمیر نو اور ترقی کے مصروف عمل ہے موضوع کو مدنظر رکھتے ہوئے یہ بات واضح ہوگیا کہ آج کا سوات امن و امان ، سکون واطمینان ، ترقی و خوشحالی کا گہوارہ بن چکا ہے اور یہ سب اللہ تعالیٰ کے خصوصی عنایت اور افواج پاکستان کی قربانیوں کا صلہ ہے ۔ 

ملک و قوم دشمن عناصر پر ایک بات واضح ہونی چاہیئے کہ ہمارے سینے اپنے شیردل افواج کیلئے پیار ومحبت اور عقیدت واحترام سے بھرے ہوئے ہیں اور یہ عزت کوئی ختم نہیں کرسکتا کیونکہ افواج پاکستان اور دیگر قانون نافذ کرنے والے اداروں کے ہمارے اوپر بے شمار احسانات ہیں اس لیے کہ ھم نے ملکر اس وطن کی بقاء و سلامتی کی حفاظت کی ہے اور تاحیات اس دھرتی ک حفاظت کریں گے 

کیونکہ سب سے پہلے پاکستان

مجید اللہ یوسفزئی
Share To:

Social Community

Post A Comment:

0 comments so far,add yours